بائیو سینسر ایک  ایسے آلے کو کہتے ہیں جو الیکٹرک کرنٹ کا استعمال کر کے حیاتیاتی تجزیہ کرتا ہے اورڈیٹا محفوظ کرتا ہے۔ زراعت میں بائیو سینسرز فصلوں اور مٹی میں بیماریوں کی ممکنہ موجودگی کی پیشن گوئی کے لیے استعمال کیا جاتا  ہے۔ بائیو سینسرز پرانے طریقوں کی نسبت صحیح اورجلدی معلومات فراہم کرتے ہیں۔ بائیوسینسرز کے تین حصے ہوتے ہیں، سینسریا ڈیٹیکٹر، ٹرانسڈیوسر اورالیکٹرک سرکٹ۔

بائیو سینسرز سگنل بھیج کر مختلف عناصر کی پہچان کرتے ہیں۔ بائیو سینسرمیں ایک حیاتیاتی جزو کو فزیکو کیمیکل ڈیٹیکٹر میں رکھاجاتا ہے۔ حیاتیاتی عنصر، جیسے ٹشو، مائکروآرگنیلز، سیل ریسیپٹرز، انزائمز، اینٹی باڈیز، نیوکلک ایسڈزوغیرہ بائیوسینسر میں موجود حیاتیاتی جزوکے ساتھ تعامل کرتے ہیں اور بائیو سینسر میں موجود حیاتیاتی عنصر کو تبدیل کرتے ہیں۔ ڈیٹیکٹر حیاتیاتی جزو کی  تبدیلی کی پیمائش کرتا ہے اور ٹرانسڈیوسر کی مدد سے اسکو سگنل میں تبدیل کرتا ہے۔ بائیوسینسرالیکٹرک سرکٹ یا ریڈر ڈیوائیس ان سگنلز کولیتا ہےاور نتائج مرتب کرتا ہے۔ زراعت میں مختلف اقسام کے بائیوسینسرز استعمال ہو رہے ہیں:

فصل کی بیماریوں کا پتہ لگانے والےسینسرز:

ان سینسرز میں ایس پی آر ٹیکنیک کا استعمال کیا جاتا ہے۔ اس ٹیکنیک میں بائیوسینسر و ایک پھپھوند فیکوسپورا پیکیرائزی کا پتہ لگاتا ہے جو سویا بین میں کنگھی کی وجہ بنتا ہے۔ اسکے علاوہ مکئی میں کلوروٹک موزیک وائرس کا پتہ لگانے کے لئے بھی اس سینسر کا استعمال کیا جاتا ہے۔ اس سینسر کی وجہ سے بہت ابتدائی مرحلے پر ہی بیماری کا پتہ چل جاتا ہے اور بیماری کو آسانی سے کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ اسکے علاوہ مختلف بیماریوں کا پتہ لگانےکے لئے بھی سینسرز موجود ہیں۔

فصلوں میں پیتھوجنز(بیماری پیدا کرنے والے جاندار) کا پتہ لگانے والے سینسرز:

کیو سی ایم(کوارٹز کرسٹلائن مائکرو بیلنسر) بائیوسینسر پودوں میں جیسا کہ رالسٹونیا سولانیسیرم،زنتھومیٹا کمپیسٹرس پی وی ویسیکیٹوریا یا دوسرے پیتھوجنز کی موجودگی کا پتہ لگاتے ہیں۔

ایگرونومی اور مٹی والے سینسرز:

الیکٹرو کیمیکل بائیو سینسرز کا استعمال فصل کی بہتر اور معیاری پیداوار حاصل کرنےکے لیے کیا جاتا ہے۔ یہ سینسرزمٹی کی پی ایچ اور غذائی اجزاء کی جانچ کے لئے بھی اہم ہیں۔ الیکٹرانک نوز (ای نوز)بائیو سینسر کا استعمال پھلوں کے پکنے اورمٹی سے پیدا ہونے والے پیتھوجینز کا پتہ لگانے کے لئے کیا جاتا ہے۔

آرگینوفاسفورس والے سینسرز:

آرگینو فاسفورس کیمیائی مرکبات کا گروپ ہے جو بڑے پیمانے پر جدید زراعت میں کیڑے ماراور جڑی بوٹی مار ادویات کے طور پر استعمال ہوتا ہے۔  زراعت میں کیڑے مارادویات کا استعمال بہت بڑھ گیا ہے۔ جسکی وجہ سے آرگینوفاسفورس مرکبات کی مقدار زمین میں بڑھتی جا رہی ہے جو دوسرے جاندواروں کے لئے نقصاندہ ہے۔ بائیوسینسرز زمین میں آرگینوفاسفورس کی مقدار کا پتہ لگانے کے لئے استعمال ہوتے ہیں۔

کیڑے مار ادویات والے سینسرز:

امیونوسینسرز میں اینٹی باڈیز یا اینٹی جنز کا استعمال کر کے مخصوص عناصر کا پتہ لگایا جاتا ہے۔ الیکٹرواسیٹائلکولینسٹریز بائیو سینسرز پھلوں اور سبزیوں میں کاربامیٹ کیڑے مار ادویات کی مقدار کا پتہ لگانے کے لئے استعمال کئے جاتے ہیں۔ بائیو سینسرز کا استعمال کر کے بیکٹیریا، وائرس اور پھپھوندی سے ہونے والے نقصانات سے فصلوں کوبروقت بچایا جا سکتا ہے۔ جس سے پیداوار بہتر ہوتی ہے۔