ریشم کے کیڑے پالنا؛ ایک منافع بخش کاروبار

ریشم کی پیداوار کے مقصد کے لیے ریشم کے کیڑوں کی افزائش اور پرورش کا عمل سیریکلچر کہلاتا ہے۔ زیادہ تر عالمی ریشم کی فراہمی گھریلو ریشم کے کیڑے سے آتی ہے، جسے بومبیکس موری بھی کہا جاتا ہے۔تاریخی شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ ریشم چین میں دریافت ہوا جہاں سے یہ صنعت دنیا کے دیگر حصوں میں پھیلی۔ ریشم نے 4000 سال سے بھی زیادہ عرصہ قبل دریافت ہونے کے بعد سے ہی انسان کی معاشی زندگی میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے۔

ریشم کے کیڑے معاشی طور پر  اہم کیڑے ہیں، کیونکہ یہ ریشم بناتے ہیں۔  ریشم کا عالمی ٹیکسٹائل مارکیٹ میں صرف 0.2فیصد حصہ  ہے۔ اس کی 90 فیصد پیداوار ایشیا خاص طور پر چین اور انڈیا میں ہو رہی ہے۔ ریشم کی عالمی پیداوار کا بقیہ 10فیصدبرازیل، ازبکستان، ویت نام، شمالی کوریا اور تھائی لینڈ سے آتا ہے۔  ریشم کے کیڑوں کو شہتوت کے پتے کھلائے جاتے ہیں۔ یہ کیڑا 300 سے 900 میٹر (1,000 سے 3,000 فٹ) لمبےریشہ کے ساتھ اپنا کوکون بناتا ہے۔ریشم دو عناصر فائبر اور سیریسن سے مل کر بنتا ہے ۔ ریشم کا 75 سے 90فیصد حصہ فائبر پر مشتمل ہوتا ہے جسکا قطر 0.0004 انچ ہے۔ جبکہ بقیہ 10 - 25فیصد حصہ سیریسن سے بنا ہوتا ہے، جسکو ریشم کا کیڑہ تیار کرتا ہے جو ریشوں کو ایک کوکون میں چپکاتا ہے۔  ایک پاؤنڈ ریشم (0.4 کلوگرام) بنانے میں تقریباً 2,000 سے 3,000 کوکون لگتے ہیں۔

ریشم کی پیداوار کے مراحل درج ذیل ہیں

  • ریشم کی پیداوار کا پہلا مرحلہ انڈے دینا ہے۔ عام طور پر، یہ کنٹرول شدہ ماحول میں ہوتا ہے جیسا کہ ایلومینیم باکس ۔ریشم کی مادہ 300 سے 500 انڈے دیتی ہے۔
  • ریشم کے انڈے سے لاروا یا کیٹرپلر نکلتے ہیں، جنہیں ریشم کے کیڑے کہتے ہیں۔
  • لاروا شہتوت کے پتے کھاتے ہیں۔
  • کھانے کے دوران لاروا اپنی جلد کو چار بار  بدلتا ہے۔ اور اپنے ابتدائی وزن سے 50,000 گنا زیادہ شہتوت کے پتے کھاتے ہیں۔
  • بالغ ریشم کے کیڑے تقریباً 3 انچ لمبے ہوتے ہیں، اور ان کا وزن 10,000 گنا زیادہ ہوتا ہے جب وہ انڈوں سے نکلے تھے۔ چھ ہفتوں  بعد، ریشم کا کیڑا ریشم بناتا ہے۔
  • ہوا سےریشم سخت ہوجاتا ہے۔
  • ریشم کا کیڑا تقریباًدو یا تین دنوں میں اپنے آپ کو مکمل طور پر کوکون میں بند کر لیتا ہے۔ ہر کوکون میں قابل استعمال معیاری ریشم کی مقدار کم ہوتی ہے۔ایک پاؤنڈ خام ریشم پیدا کرنے کے لیے تقریباً 2500 ریشم کے کیڑے درکار ہوتے ہیں۔
  • کوکون میں کیڑے انزائمز خارج کر کےسوراخ کر دیتے ہیں اورریشم کےکیڑے باہر نکل جاتے ہیں۔ یہ انزائمز ریشم کو خراب کرتے ہیں۔ اس لئے کوکون کو گرم پانی میں رکھا جاتا ہے جس سے یہ کیڑے مر جاتے ہیں۔
  • اسکے بعد کوکون  کو  برش سے صاف کر کے ریشم الگ کیا جاتا ہے۔
  • اس کے بعد ریشم کو ریل پر لپیٹا جاتا ہے۔ ایک کوکون میں تقریباً 1,000 گز ریشم ہوتا ہے۔ریشم کی اس حالت
  • کو خام ریشم کہا جاتا ہے۔

مزید معلوماتی لنکس 
https://fwf.punjab.gov.pk/sericulture_detail