جدید زراعت میں جب عمدہ کوالٹی کے پودوں اور نرسری کی تیاری کے لئے مٹی کے بجائے کسی دوسرے نامیاتی مواد کا استعمال کیا جاتا ہے تو اس کو سوائل لیس فارمنگ کہتے ہیں۔اسکے لئے کئی قسم کے مواد استعمال کئے جاتے ہیں جن میں پیٹ موس، ناریل کا برادہ، راک وول، لکڑی کا برادہ وغیرہ اہم ہیں۔ روایتی کاشتکاری کے مقابلے میں سوائل لیس فارمنگ اختیار کرنے سے بہتر کوالٹی کی پیداوار حاصل کی جا سکتی ہے جس  میں زمینی کاشت کے مقابلے میں بہتر قیمت ملتی ہے۔ زمین میں کاشت کی گئی فصلوں میں استعمال ہونے والی کھادیں لیچنگ کے باعث پانی کی کوالٹی متاثر کرتی ہیں جبکہ سوائل لیس فارمنگ میں ایسا نہیں ہوتا بلکہ اس فارمنگ سے زمین میں کاشت کی گئی فصلوں کی نسبت پانچ تا دس گنا زیادہ پیداوار لی جا سکتی ہے۔ اس میں آبپاشی کے لئے کم کھادوں اور پانی کی ضرورت ہوتی ہے۔ مزید برآں ایک جیسی کوالٹی کی فصل ایک ہی وقت پر تیار ہوتی ہے جس سے برداشت و بعد از برداشت نگہداشت کے اخراجات میں بھی کمی واقع ہوتی ہے۔سوائل لیس فارمنگ کے لئے کئی اقسام کے مواد استعمال کئے جاتے ہیں جن میں سے کچھ درجزیل ہیں

پیٹ موس

پیٹ گلا ہوا نامیاتی مواد ہے جسے مٹی کی جگہ کاشتی میڈیا کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔ فِن لینڈ پیٹ کاسب سے بڑا پیداواری ملک ہے۔

ناریل کا برادہ

ناریل کا برادہ پیٹ موس کے بعد استعمال ہونے والا نامیاتی میڈیا ہے  اسکو کو کو پیٹ بھی کہتے ہیں۔اسے ناریل کے خول سے تیار کیا جاتا ہے۔ انڈیا اور سری لنکا اسکے بڑے پیداواری ممالک ہیں۔پاکستان کے ساحلی علاقوں میں ناریل کی کاشت کی جاتی ہے جس سے کچھ مقدار مین کوکوکائر تیار کیا جاتا ہے لیکن اسکی کوالٹی  اچھی نہین ہوتی۔

راک وول

یہ آتش فشاں سے نکلنے والا مادہ ہے جس مین نمکیات کی مقدار صفر ہوتی ہے اور اساس ہلکی یا معتدل ہوتی ہے۔راک وول کاشت شدہ پودوں کو اجزائے خوراک کی فراہمی بزریعہ آبپاشی کی جاتی ہے۔گرین ہاوس میں کاشکاری کے دوران اسکا استعمال کافی زیادہ ہو گیا ہے۔

لکڑی کے ریشے

اسکو لکڑی سے تیار کیا جاتا ہے۔یہ پودوں کی نشونما کے لئے اچھا میٹیریل ہےتاہم اس میں موجود نائٹروجن پودون کو دستیاب نہیں ہوتی  اور اضافی نائٹروجن کی ضرورت ہوتی ہے۔

مذکورہ بالا نامیاتی میڈیا کے علاوہ پر لائٹ، ورمی کو لائٹ اور پومس وغیرہ کو عمدہ نکاس کی حامل خصوصیات کی بنا پر پیٹ اور ناریل کے برادے میں ملا کر استعمال کیا جاتا ہے۔ دنیا میں کئی ممالک میں  کمپنیاں نامیاتی میڈیا تیار کر کے کاشتکاروں کی آسانی کے لئے انہیں  کر رہی ہیں۔لیکن یہ مہنگے ہونے کی وجہ سے پاکستان میں قلیل مقدار میں درآمد ہو رہے ہیں۔فیصل آباد یونیورسٹی نے یواے ایف گرو کے نام سے ایک مقامی میڈیا تیار کیا ہے جو  سستا اور کارآمد ہے جسے استعمال کر کے مقامی کاشتکار کم اخراجات کے ساتھ اچھی فصلیں تیار کر سکتے ہیں۔