پاکستان میں ڈیری کا شعبہ دن بدن ترقی کر رہا ہے اور بڑھتی ہوئی آبادی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے اہم کردار ادا کر رہا ہے جسکی وجہ سے دودھ کی مصنوعات کی درآمد پر خرچ کیے جانے والے زرمبادلہ میں بھی کمی آ رہی ہے۔ تاہم مستقبل میں اس صنعت کوکچھ مسائل بھی درپیش ہیں جن پر غور کرنے کی ضرورت ہے۔ ان مسائل میں سے کچھ مندرجہ ذیل ہیں:

  •  افزائش کے منصوبوں کی عدم موجودگی میں، ملک کے مختلف حصوں میں قائم کارپوریٹ اور میگا فارمز مختلف ترقی یافتہ ممالک سےجانور درآمد کر رہے ہیں۔ کم لاگت پر اعلیٰ جینیاتی خصوصیات کے حامل جانوروں کی پیداوار مشکل ہے اور تحقیق کے لیے بہت زیادہ وسائل کی ضرورت ہے۔ ہر بار ڈیری جانوروں کی درآمد کے لیے لاگت کی ضرورت ہوتی ہے۔ ہر دفعہ جانور درآمد کرنا بھی مشکل ہو جاتا ہے۔یہ ایک اہم مسئلہ ہے۔
  • دودھ میں اینٹی بائیوٹک کی موجودگی ایک عالمی مسئلہ ہے۔ پاکستان جیسے ممالک میں جہاں حفظان صحت کی صورتحا ل ناقص ہے، وہاں مختلف بیماریوں کا پھیلاؤ عام ہے۔ ایسے جانوروں جنکو اینٹی بائیوٹک ادویات دی گئی ہو ں ان سے حاصل کیے گئے دودھ اور اس دودھ سے بنی مصنوعات میں اینٹی بائیوٹک کی باقیات صحت عامہ کے لیے سب سے بڑا چیلنج ہیں۔ ایسا دودھ بہت سی بیماریوں کی وجہ بنتا ہے۔ہمارے ملک میں دیگر حفظان صحت کے مسائل کے ساتھ یہ بھی ایک مسئلہ ہے۔ اس مسئلہ کے حل کے لئے گورنمنٹ کی سطح پر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔
  •  موجودہ دور میں ڈیری سے متعلق تمام کام جیسے ڈیری فارم شروع کرنا، جانوروں کو کھانا کھلانااور فارم میں اعلیٰ درجے کی حفظان صحت کے نظام کو برقرار رکھنے کے اخراجات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔ یہ اخراجات مصنوعات کی قیمت کو کنٹرول کرتے ہیں جسکی وجہ سے فارم کے مالکان کو بہت کم منافع حاصل ہوتا ہے۔اس وجہ سے سرمایہ کار بڑے پیمانے پر فارمز نہیں بناتے۔ ملک میں ڈیری فارمنگ کی صنعت کے فروغ کے لئے ان مسائل کو حل کرنا ضروری ہے۔
  • افلاٹوکسین ایک زہریلا کیمیائی مرکب ہے جو مختلف فیڈز میں پایا جاتا ہے۔ افلاٹوکسن جسم میں داخل ہونے کے بعد جسم میں پھیلتا ہے اور اس سے سرطان، جگرکی خرابی اور الرجی جیسی بیماریاں پیدا ہوتی ہیں۔یہ مرکب ایسے جانوروں کے دودھ میں موجود ہوتا ہے جو ایسی فیڈ یا ونڈا کھاتے ہیں جس میں افلا ٹوکسن موجود ہو۔

پاکستان میں یہ سب مسائل ڈیری فارمنگ کے کاروبار کی بڑے پیمانے پر ترقی کے راستے میں رکاوٹ ہیں۔ اس صورتحال کی وجہ سے سرمایہ کار ڈیری کے کاروبار میں سرمایہ کاری کرنے سے ڈرتے ہیں اور ملک کی دودھ کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے دودھ اور دودھ کی مصنوعات کی درآمد کی جاتی ہے۔ اوپر درج کئے گئے مسائل کے حل کے لئے گورنمنٹ کو بڑے پیمانے پر کوشش کرنی چاہئے۔ مستقبل میں ہمیں ایسے فارمز کی ضرورت ہے جو بڑھتی ہوئی آبادی کی ڈیری مصنوعات کی ضرورت کو پورا کرنے کی صلاحیت رکھتے ہوں۔