بائیوچار: مٹی کی پیداواری صلاحیت بڑھائے

بائیو چار  کاربن سے بھرپور نامیاتی  مواد ہے جو آکسیجن کی غیر موجودگی میں ایک خاص درجہ حرارت پر فصلوں کی باقیات،گھاس، گنے  کا گودا اور لکڑی  کو جلا کر بنایا جاتا ہے۔ ہر سال بہت سی فصلوں کی باقیات بچ جاتی ہیں اور جلا دی  جاتی ہیں ۔فصلوں کی باقیات کو براہراست جلانا ماحولیاتی آلودگی کا باعث بنتا ہے۔ ان باقیات کا بہتر استعمال بائیوچار بنا کر کیا جاتا ہے۔

 بائیو چار کو  خاص قسم کی بھٹیوں میں بنایا جاتا  ہے جن کے دو حصہ ہوتے ہیں ایک  سلنڈر ٹیوب جس میں بائیوچار تیار کیا جاتا ہے اور دوسرہ حصہ ٹیوب فٹ ہے جو کہ بھٹی کے ہولڈر کے طور پے استعمال ہوتا ہے۔ ویکیوم پمپ کے ذریعے بھٹی سے آکسیجن کو نکالا جاتا ہے ۔ اور ایل پی جی گیس کو فیول کے طور استعمال کیا جاتا ہے۔ عام طور پر، بائیوچار بنانے کے لیے پانچ سو سے آٹھ سو درجہ سینٹی گریڈکو بہترین درجہ حرارت سمجھا جاتا ہے۔

  بائیو چار کا استعمال  دو ہزار سال پہلے  شمالی امریکہ کی زمین  میں  کیا گیا  ۔ جنوبی امریکہ کے ایمازون بیسن  کی زرخیز    زمین میں  بھی بائیو چار کے بکثر استعمال کے ثبوت ملتے ہیں۔بائیو چار کے بہت سے استعمال ہیں  جو زمین کی اصلاح کے ساتھ ساتھ  مندرجہ ذیل  فوائد پر مشتمل ہیں:

بائیوچار مٹی کے  ذرات کو آپس میں جوڑ کر رکھتا ہے اور مٹی کےکٹاؤ کو روکتا ہے۔

بائیو چار کاربن پر مشتمل ہوتا ہے جو کہ زمین کی ذرخیزی بڑھاتا ہے۔

بائیوچار پانی کو زیادہ دیر تک زمین میں روک کے رکھتا ہے۔

بائیو چار ہوا میں خارج ہونے والی گیسوں کے اخراج کے عمل کو روکنے میں مد د دیتا ہے۔

بائیوچار   کی مدد سے  زراعت میں کیمیائی کھادوں کے استعمال اور  ضرورت کو کم  کیاجا تا ہے، جس کے نتیجے میں کھاد کی تیاری  کے دوران ہونے والا گرین ہاؤس گیسوں کا اخراج کم ہو جاتا ہے۔

بائیو چار زمینی جرثوموں کی تعداد بڑھاتا ہے کیونکہ بائیو چار کاربن پر مشتمل ہوتا ہے جو کہ جرثوموں کے لئے نہایت اہم ہے۔

بائیوچار زمین کی اساسیت کو معتدل کرتا ہے۔