فولیرکھاد، کھاد کی ایک  ایسی قسم ہے جوبراہراست پودوں کے پتوں پرسپرے کی جاتی ہے۔ فولیر کھادیں جلدی  اثرکرتی ہیں کیونکہ عام کھادیں زمین میں ڈالی جاتی ہیں اوران میں موجود غذائی اجزاء کو پودوں تک پہنچنے میں وقت لگتا ہے۔ سرد موسم میں جب مٹی ٹھنڈی ہوتی ہے تو کھادوں کا استعمال فائدہ مند نہیں ہوتا کیونکہ ایسے موسم میں جڑوں کی کھاد استعمال کرنے کی سرگرمی بہت کم ہو جاتی ہے ۔ایسے حالات میں پودوں کی نشونما بڑھانے کے لئےفولیر کھادوں کا استعمال بہت فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔ فولیر کھادیں نامیاتی اور غیر نامیتی دونوں قسم کی ہوتی ہیں۔ 

فولیر کھادوں کے بہت سے فوائد ہیں مثلاً:

  • عام کھادوں کے استعمال سے زیادہ ترغذائی اجزاء ضائع ہو جاتے ہیں اور پودوں کو نہیں ملتے جبکہ فولیر کھادوں میں موجود غذائی اجزاء ضائع نہیں ہوتے اور مکمل طور پر پودوں تک پہنچ جاتے ہیں۔

  • فولیر کھادوں کے استعمال سےغذائی اجزاء پودے کے پتوں میں براہ راست جذب ہوتے ہیں۔ جس کے نتیجے میں جڑوں کی نشونما بھی بہتر ہوتی ہےاورپودے کی زمین سے غذائی اجزاء لینے کی صلاحیت میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔

  • ایسے پودے جن میں غذائی اجزاء کی کمی ہو انکو فوری طور پر غذائی اجزاء میسر آجاتے ہیں۔

  • فولیر کھادوں کے استعمال سے نائٹریٹ اور دیگر عناصر کی لیچنگ کافی حد تک کم ہو جاتی ہے۔

فولیر کھادوں کے  فوائد کے ساتھ ساتھ کچھ نقصانات بھی ہیں جو کہ مندرجہ ذیل ہیں:

  • فولیر کھادوں کا استعمال ایک مہنگا طریقہ ہے۔ چونکہ پودے تمام غذائی اجزاء فوراً جذب کر لیتے ہیں اس لئے فولیر کھادوں کا استعمال زیادہ اور بار بار کرنا پڑتا ہے۔

  • فولیر کھادوں کا مناسب طریقے سے استعمال نہ کرنے کی صورت میں پودوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔ پودے کے کسی بھی حصہ پر ضرورت سے زیادہ سپرے کرنےکی صورت میں پودہ جل جاتا ہے۔

  • فولیر کھادوں کا استعمال صبح یا شام کے وقت کیا جاتا ہے۔ کیونکہ اس وقت پودوں پر نمی موجود ہوتی اور پتوں پرسٹومیٹا کھلےہوتے ہیں جسکی وجہ سےغذائی اجزاء پتوں میں چلے جاتے ہیں۔ جبکہ ان کھادوں کا دن کے وقت استعمال سے یہ پودوں میں جذب نہی ہوتے اورپودوں کے لئے نقصاندہ ثابت ہوتا ہے۔

  • نائٹروجن کا فولیئر استعمال کاشت کے بعد صرف چار سے چھ ہفتوں کے اندر کیا جا سکتا ہے، اور اگر یہ غلط وقت پر کیا جائے، تو نائٹروجن پودے کی پیداوار میں اضافہ نہیں کرتی۔

  • پوٹآشیم اور فاسفورس کو فولیر کھاد کے ذریعے سپرے نہیں کیا جا سکتا جبکہ چھوٹے غذائی اجزاء(مائکرو نیوٹرنٹس) جیسا کہ زنک، میگنیز اور بوران فولیر کھاد کے ذریعے سپرے کئے جاتے ہیں۔