fbpx

wrapper

  0092-337-7252474   |     

 

اتوار, 19 مئی 2019

گاجر کی کاشت | اُردو آڈیو کیساتھ

گاجرموسم سرما میں کاشت ہونے والی ایک اہم فصل ہے۔ اپنی غذائیت اور ذائقہ کی وجہ سے گاجرکا شماردُنیا بھر میں کھائی جانے والی مقبول سبزیوں میں ہوتا ہے۔ اس مضمون میں گاجر کی کاشت کے اہم موضوعات وقت کاشت، زمین کی تیاری، طریقہ کاشت، پودوں کی چھدرائی، کھادوں کا استعمال اور آبپاشی کے متعلق بتایا گیا ہے۔   

 وقت کاشت

 گاجر کی اچھی پیداوار کیلئے موزوں  درجہ حرارت بہت ضروری ہے۔ زیادہ گرم یا زیادہ سرد موسم گاجر کی رنگت، جسامت اور ذائقہ کو متاثر کرتے ہیں۔  بیج کے آگاؤ کیلئے موزوں درجہ حرارت دس سے پچیس ڈگری سینٹی گریڈ ہے جبکہ اچھی پیداوار کیلئے موزوں درجہ حرارت بیس سے پچیس ڈگری سینٹی گریڈ ہے۔ پنجاب کے میدانی علاقوں میں گاجر ستمبر سے اکتوبر اور پہاڑی علاقوں میں مارچ سے اپریل تک گاشت ہوتی ہے۔ سندھ میں اگست سے نومبراور خیبرپختون خواہ میں ستمبر سے اکتوبر تک گاشت ہوتی ہے۔ بلوچستان کے میدانی علاقوں میں گاجر اکتوبر سے نومبراور پہاڑی علاقوں میں جولائی سے اگست تک گاشت ہوتی ہے (1)۔  

 زمین کی تیاری 

 گاجر کی فصل کیلئے بُھربُھری زرخیز زمین موزوں ہوتی ہے۔ اگیتی اقسام ریتلی زرخیز زمین میں بھی اچھی پیداوار دیتی ہیں۔ گاجر ایک لمبی جڑ والی فصل ہے۔ اس لئے زمین کو وتر حالت میں تین چال دفعہ گہرا ہل اور سہاگہ چلا کر تیار کریں۔ ہل کی گہرائی کم از کم ایک فٹ ہونی چاہیے۔  تاکہ زمین گہرائی تک نرم اور بُھربُھری ہوجائے۔ بیج کی بوائی سے پہلے جڑی بوٹیاں مکمل طور پر تلف کر دیں۔     

 طریقہ کاشت 

گاجر بذریعہ کیرا یا چھٹا کاشت کی جاتی ہے۔ کاشت ڈیڑھ سے دو میٹرچوڑی اور تقریباً آٹھ انچ اُونچی پٹڑیوں (raised bed) پر کی جاتی ہے۔carrot raised bed cultivation  پٹڑیوں کا کنارے سے کنارے کا فاصلہ دو فٹ ہوتا ہے۔ سرد موسم میں بوائی کرتے وقت بیج کی گہرائی کم رکھیں جبکہ گرم موسم میں بوائی کی صورت میں بیج کی گہرائی ذیادہ رکھیں۔ ایک ایکڑ کیلئے گاجر کا چھ سے آٹھ کلو بیج استعمال ہوتا ہے۔ بوائی سے پہلے بیج کو پھپھوندی کُش زہر دو گرام فی کلوگرام کے حساب سے لآزمی لگائیں۔ بیج کو کیرا کرنے کے بعد ہلکی مٹی سے ڈھانپ دیں۔ گاجر کے بیج کا اُگاؤ ڈیڑھ سے دو ہفتے میں مکمل ہوتا ہے۔ جبکہ فصل سو سے ایک سو بیس دن میں تیار ہوتی ہے۔

 پودوں کی چھدرائی 

 گاجر کی اچھی پیداوار کیلئے جڑی بوٹیوں کی تلفی اور چھدرائی بہت ضروری ہیں۔ جب پودوں کی اُونچائی تقریباً دو انچ ہو جائے تو چھدرائی کرکے پودوں کا درمیانی فاصلہ ڈیڑھ سے دو انچ کر دینا چاہیے۔thinning of carrot

 کھادوں کا استعمال 

 گاجر کی اچھی پیداوار کیلئے کھیت کی تیاری کے وقت زمین میں 2 بوری ڈی-اے-پی اور ایک بوری پوٹاش فی ایکڑ ڈالیں۔ اور پودوں کے اُگاؤ کے ایک ماہ بعد ایک بوری یوریا  فی ایکڑ ڈالیں۔ گاجر کی فصل کیلئے کیمیائی کھادوں کی موزوں مقدار پینتالیس کلوگرام نائڑوجن، پینتالیس کلوگرام  فاسفورس اور پچیس کلوگرام پوٹاش ہیں۔ نائڑوجن اور فاسفورس کا اکٹھا استعمال فصل کیلئے فائدہ مند ہوتا ہے (2,3)۔

آبپاشی 

 بیج کو بوائی کے  فوراً بعد اس طرح پانی لگائیں کہ بیج کو پانی کی صرف نمی پہنچے۔  پودوں کے اُگاؤ تک ہفتہ میں دو دوفعہ اور اُگاؤ کے بعد ہفتہ میں ایک دفعہ آبپاشی کریں۔ 

 

[1] Sabzian, Fuji Fertilizer Company Ltd.

[2]  Sardiaon ki sabzion ki kasht, Dr. Shahid Niaz.

[3] https://afghanag.ucdavis.edu/fruits-nuts-vegetables/Vegetables/files/carrots/exthortafgcarrotproductioneastregideappt.pdf

[4] https://www.agric.wa.gov.au/broccoli/diseases-vegetable-brassicas?page=0%2C1

[5] https://ag.umass.edu/vegetable/fact-sheets/carrots-identifying-diseases

[6] https://plantvillage.psu.edu/topics/carrot/infos

 

 

 

 

وزٹس 1195
ریٹ کریں
(0 votes)

ہمارے بارے میں

 

PakAgriMarket فراہم کرتا ہے پہلی مرتبہ پاکستان میں ایک ایسا پلیٹ فارم جہاں زرعی مصنوعات کی مفت تشہیر کے علاوہ جدید کاشتکاری کی معلومات بھی فراہم کی جاتی ہیں۔  تاکہ کاشتکار کے نقصان کو کم سے کم اور منافع کو ذیادہ سے ذیادہ کیا جاسکے۔

آپ ہمارے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کا استعمال کرتے ہوئے ہم سے رابطہ کرسکتے ہیں۔